We use cookies to provide some features and experiences in QOSHE

More information  .  Close
Aa Aa Aa
- A +

خلائی مخلوق سے ودھائی مخلوق تک

2 3 1
18.01.2019

خلائی مخلوق سے ودھائی مخلوق تک

خدا کے بندو خلقِ خدا سے نا سہی‘ خدا سے اور وارثانِ شہداء سے معافی تو مانگو۔

دوڑ پیچھے کی طرف اے گردشِ ایام تُو۔ یہ ابھی گزرے کل ہی کی تو بات ہے۔ ماضی بعید کا بھولا بسرا قصہ نہیں۔ جب زمینِ فرش پر خدائی کے دعوے دار‘ خالص خدائی لہجے میں اور بزعمِ خود ''حکمران خاندان‘‘ بن بیٹھے تھے۔ اس دورِ حکمرانی میں سپریم کورٹ آف پاکستان کے معزز لارجر بینچ کو 5 بندے کا لقب دیا گیا۔ ملک کی آخری عدالت کے فیصلے کو عوام کی پرچی پھاڑنے والا کاغذ قرار دیا گیا۔ جے آئی ٹی خلائی مخلوق کی کارندہ بنا دی گئی۔ جی ہاں یہ بھی ابھی کل ہی کی تو بات ہے کہ حکمران خاندان کے مجرمانِ ثلاثہ نے یہاں تک کہہ ڈالا کہ ان کے خلاف فیصلے زمین پر رہنے والی جوڈیشری نہیں کرتی بلکہ خلائی مخلوق لکھتی ہے۔ ساتھ ایک اور دعویٰ بھی سامنے آیا۔ یہی کہ ہمیں معلوم ہے‘ ہمارے خلاف فیصلے کہاں پر لکھے جاتے ہیں۔ چار، پانچ ''ٹَٹ پونجئے‘‘ تو عسکری اداروں پر اتنا بولے کہ بپن راوت اور نریندر مودی‘ دونوں شاہ سے زیادہ شاہ کی وفاداری پر شرما کر پسینے پسینے ہو گئے۔

آئیے ذرا سا اور پیچھے چلتے ہیں۔ سنیے تو ، حکمران خاندان کا وفاقی وزیر داخلہ اور پنجاب کا وزیرِ امورِ ماورائے قانون و داخلہ بھی‘ دونوں کیا کہتے رہے ہیں۔ نواز حکومت قلم والوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ غلیل والوں کا ساتھ ہم کبھی نہیں دیں گے۔ بے اعتدال ، بے سُرے، بے کمال سیاسی اداکاروں کی ٹولی جو ''لام‘‘ گروپ کے نام سے کیمروں پر مشہور ہوئی‘ صبح و شام ایک ہی گردان کرتی رہی ۔ فوجی مداخلت جمہوریت کو چلنے نہیں دیتی ۔ اپنے قومی اداروں........

© Roznama Dunya